کم جونگ اُن کا خط موصول، ٹرمپ ملاقات کے لیے راضی ہوگئے

 امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ اُن کا خط موصول ہونے کے بعد ملاقات کے لیے راضی ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق وائٹ ہاؤس میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے امریکی صدر کا کہنا تھا کہ شمالی کوریا جوہری ہتھیار تلف کرتا ہے تو مذاکرات کے لیے تیار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ انہیں شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ اُن کا خط موصول ہوا جس میں ملاقات کی خواہش کا اظہار کیا گیا ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ شمالی کوریا کو جوہری ہتھیاروں سے پاک کرنا ان کی پالیسی کا حصہ ہے، اگر شمالی کوریا اپنے جوہری ہتھیاروں دستبردار ہونے پر آمادہ ہے تو وہ مذاکرات کرنے کیلئے تیار ہیں۔

امریکی صدر نے کم جونگ ان سے جلد ملاقات کا عندیہ دیا ہے۔

خیال رہے کہ گذشتہ دنوں شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ ان نے ایک بار پھر دھمکی دی تھی کہ اگر امریکی اقتصادی پابندیاں مسلسل جاری رہیں تو وہ دوبارہ جوہری پروگرام شروع کردیں گے۔

انہوں نے کہا تھا کہ ہم خطے سے جوہری تنصیبات کا خاتمہ کرچکے ہیں، نہیں چاہتے دوبارہ نیوکلیئر پروگرام شروع کریں، امریکا کا رویہ ایسا ہی رہا تو ہم جوہری ہتھیاروں کا سلسلہ دوبارہ شروع کردیں گے۔

واضح رہے کہ جون 2018 میں سنگاپور کے جزیرے سینٹوسا میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور جنوبی کوریا کے سربراہ کم جونگ اُن کے درمیان ون آن ون تاریخی ملاقات جزیرہ سینٹوسا کے کیپیلا ہوٹل میں ہوئی تھی، دونوں رہنماؤں کی جانب سے مثبت تاثر سامنے آیا تھا۔

بعد ازاں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ ان کو وقت آنے پر وائٹ ہاؤس ضرور بلاؤں گا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.