پاکستانی کرسچین کمیونٹی نے دبئی میں کرسمس ڈے منایا

نیواپا سٹالک چرچ کی طرف سے پاکستانی کرسچین کمیونٹی نے پاکستان ایسوسی ایشن دبئی کے وسیع ہال میں کرسمس کی خوبصورت تقریب منعقد کی جس میں پاکستانی کرسچین کمیونٹی کے لوگوں نے امارات بھر سے شرکت کی جبکہ مسلم کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے پاکستانیوں اور قونصلیٹ کے سٹاف نے بھی مسیحی برادری کی خوشیوں میں شرکت کی۔کرسمس کے اس ایونٹ میں مسیحی راہنما جان قادر، پادری صابر مسیح، پادری ہارون، پاسٹر بشیر بہادر، پاسٹر راکس، پاسٹر جاوید عنایت، پاسٹر ٹامٹی، سرفراز گل، پاسٹر ولیم جان اور پاسٹر نوید نے جبکہ قونصلیٹ آف پاکستان دبئی سے سید مصور عباس شاہ اور صائمہ علی اعوان نے شرکت کی۔ پاکستانی مسلم کمیونٹی کی طرف سے مخدوم رئیس قریشی شہزاد بٹ، عرفان افسر اعوان، محمد زعیم اور دیگر بہت سے لوگوں نے شرکت کی۔حسب روایت کرسمس ایونٹ میں دعائیہ گیت گائے گئے اور مسیحی مذہبی راہنماﺅں نے تقاریر کیں۔ اس موقع پر کہا گیا کہ دنیا کا ہر مذہب امن سکھاتا ہے جبکہ مسیحی مذہب میں بھی امن کی تعلیم دی گئی ایک دوسرے کا احساس کرنے اور خیال رکھنے کا کہا گیا ہے۔ مذہبی راہنماﺅں نے کہا کہ جس طرح آج کل پوری دنیا میں بے امنی کی لہر اٹھی ہوئی ہے اس کا حل صرف اور صرف باہمی افہام و تفہیم میں ہے۔ لڑائی سے مسئلے حل نہیں ہوتے بلکہ اور بگڑتے ہیں لہٰذا ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم اپنے مذہبی پیشواﺅں کے نقش قدم پر چلتے ہوئے دنیا کو امن کا گہوارہ بنادیں اور امن و سکون سے رہیں۔اس موقع پر مسیحی راہنما جان قادر نے مطالبہ کیا کہ پاکستان سکولوں میں مسیحیوں کو کوٹہ کی بنیاد پر ملازمتیں فراہم کی جائیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ ہمارا دیرینہ مطالبہ ہے جو حل ہونے تک جاری رہے گا۔ جان قادر نے کہا کہ پاکستان میں مسیحی دوسری بڑی اقلیت ہیں وہاں بھی برابر کا سلوک نہیں کیا جارہا۔ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ پاکستان میں مسیحی برادری کے حقوق کو پہچانا جائے اور ان کا خیال رکھا جائے۔مقامی قانون دان مخدوم رئیس قریشی نے مسیحی کمیونٹی کے موقف کی حمایت کی جبکہ عرفان افسر اعوان نے سیاسی سطح پر مسیحی کمیونٹی کی آواز کو ایوان بالا تک پہنچانے کا وعدہ کیا۔ قونصلیٹ آف پاکستان دبئی کے ہیڈآف چانسلری سید مصور عباس شاہ نے بھی اپنی تقریر میں مسیحی برادری کو اپنے تعاون کا یقین دلایا اور ان کی آواز متعلقہ حکام تک پہنچانے کا وعدہ کیا۔ اس موقع پر مسیحی برادری کو کرسمس کے موقع پر مبارکباد دی گئی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.